Skip to content
محفوظ تحاریر برائے زمرہ : مزاحیہ مضامین
3 of 41234

  • خامہ بگوش - آزاد شاعری اور جدیدیت پسندوں کے تعاقب میں

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [25 May 2010]

    اگر چیکہ آزاد شاعری کا وجود ترقی پسند تحریک سے قبل بھی تھا جسے خامہ بگوش نے ثابت کیا لیکن ترقی پسندوں کے دور میں یہ خوب پروان چڑھی کیونکہ اس میں سطح پسندی اور سہل پسندی کی آسانیاں تھیں۔ خامہ بگوش نے آزاد جدید شاعری اور نثری نظموں کو ” اسقاطِ سخن “ یعنے [...]

  • ہم کس صدی کے ؟

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [22 May 2010]

    ابھی خدا خدا کر کے نئی صدی اور نئے ملینیم Millinium کی آمد کا شور و غوغا ختم بھی نہیں ہوا تھا کہ پلک جھپکتے سال ختم ہوگیا اب اکیسویں صدی کے سالِ آغاز کے جائزے شروع ہو جائنگے ۔ اخبارات و رسائل پھر انہی بوڑھے سیاستدانوں پر تبصرے اور کارکردگی کے جائزے لکھتے رہینگے [...]

  • غزل اور پاپ گانے والوں سے التماس

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [20 May 2010]

    اچھا ہوا ہم کوئی مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر نہیں ورنہ سارے کلاسیکل گانے والوں کو بند کردیتے اور اُسوقت تک بند رکھتے جب تک کے وہ حلف نامہ داخل نہ کریں کہ آئندہ وہ کبھی غزل کو ہاتھ نہیں لگائیں گے۔
    اگر مصرعہ اچھا لگے تو ہم اِدھر دوسرا مصرعہ سننے بے تاب ہوتے رہتے ہیں اور [...]

  • دکنی زبان کی شان

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [15 May 2010]

    یہ مانا کہ آج نہ وہ حیدرآبادی تہذیب و ثقافت باقی رہی نہ وہ جامعہ عثمانیہ اور نہ وہ دائرةالمعارف جہاں سے علم و ادب کے ایسے دریا رواں ہوئے کہ رہتی دنیا تک تشنگانِ اردو سیراب ہوتے رہیں گے۔
    اِسکے باوجود دکن کی فضاؤں میں اردو اپنی بول چال کے ذریعے اپنے صدیوں پُرانے مخصوص [...]

  • توپ کی شان

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [11 May 2010]

    ہمارے نزدیک ثوب یعنے عربوں کا پسندیدہ سفید جُبّہ ایک انتہائی مہذّب لباس ہے یہ ثوب جا کر توپ کیسے ہوگیا یہ جاننے کیلئے لفظوں کے بگاڑ کی تاریخ پڑھنی پڑے گی۔ لفظوں کو بگاڑنے کے اس فن میں صرف حیدرآبادی ہی ماہر نہیں ہیں جنہوں نے اچّھی خاصی تقریب کو تخریب کرڈالا بلکہ پاکستانی [...]

  • فائدہ سوٹ کا

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [10 May 2010]

    بھائی یوسف امتیاز کو کینیڈا سے نہ جانے کیا سوجھی کہ سوٹ پر تنقید کرنے لگے ۔
    سوٹ پہننا تو ہندوستانیوں ، پاکستانیوں اور بنگلہ دیشیوں کے بنیادی حقوق میں سے ایک ہے ۔ جیسے ہمارے اور بنیادی حقوق ہیں مثلاً سڑکوں پر بلا خوف و خطر تھوک دینا ، پان کی پچکاریوں سے اچھی [...]

  • آؤ چمچہ گِری سیکھیں

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [6 May 2010]

    اِس سے قبل کے تربیتی ورکشاپ میں ہم نے آپ کو فنِ لیڈری اور فنِ تقریر کے گُر سِکھائے تھے آیئے آج ہم رموزِ چمچہ گِری بتاتے ہیں۔
    ترقی یافتہ ملکوں میں اِسی کام کے کرنے والوں کو king maker یا lobbyist کہاجاتا ہے۔ لیکن ہمارے ہاں نہ جانے کیوں اِنہیں چمچہ کہتے ہیں حالانکہ کام [...]

  • آؤ لیڈری سیکھیں

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [5 May 2010]

    اس سے پہلے کے سبق میں ہم نے فنِ تقریر کی تربیت کی تھی، آیئے آج ہم آپ کو لیڈر بننے کے گُر سکھاتے ہیں ۔ ان آزمودہ نسخوں پر اگر آپ نے صد فیصد عمل کیا تو آپ کو ہر پارٹی ٹکٹ آفر کر سکتی ہے۔ اور اگر آپ نے ان تربیتی اصولوں پر [...]

  • آؤ تقریر سیکھیں

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [2 May 2010]

    کس نے کہا کہ تقریر کے لئے آیا کسی علمی یا فنی قابلیت کی ضرورت ہے ؟
    ہمارا خیال ہے کہ تقریر کے لئے لیڈری کے ذرا سے شوق کی ضرورت ہے جو کہ آپ میں موجود ہے جس کا ثبوت یہ ہے کہ آپ یہ مضمون آگے پڑھ رہے ہیں ورنہ عنوان دیکھتے ہی آپ [...]

  • ایک خوددار تارکِ وطن کی ڈائری

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [1 May 2010]

    1 جنوری
    آج میں نے Resign کر دیا۔ مجھ سے جونیر ایک سعودی کو منیجر بنادیا گیا۔ یہ میری قابلیت کی توہین ہے۔ ساراکام ہم کریں اور کریڈٹ وہ لے جائیں یہ غلط ہے۔ جس قوم میں ترقی کی بنیاد بجائے تعلیمی قابلیت کے نیشنالٹی یا واسطہ یا کوئی اور چیز دیکھی جائے وہ قوم کبھی [...]

3 of 41234