Skip to content
محفوظ تحاریر برائے : September 2010

  • الوداع عقیل یوسف

    زمرہ : مزاحیہ خاکے

    [15 September 2010]

    ہمیشہ کی طرح آج بھی میں نمازِ جمعہ کے لیئے مسجد پہنچا لیکن واپسی ویسی نہ تھی جیسی ہمیشہ ہوتی ہے۔ اگرچیکہ مسجد وہی، امام وہی اور خطبہ بھی کم و بیش وہی۔ کچھ لکھا ہوا کچھ رٹا ہوا جو تھوڑے بہت رد و بدل کے ساتھ برسہا برس سے سے دوہرایا جا رہا ہے۔ [...]

  • وجودِ زن سے ہے تخریبِ کائنات میں رنگ

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [15 September 2010]

    شادی شدہ جوڑوں کی تاریخ میں آدم و حوا سب سے زیادہ خوش نصیب ترین میاں بیوی گزرے ہیں۔
    حضرت آدم کو کبھی یہ طعنہ سننا نہیں پڑا کہ : “یہ میں ہی ہوں جو تمہارے ساتھ نبھا رہی ہوں ورنہ اگر کوئی دوسری ہوتی پتہ چلتا ”
    اور بی بی حوا کو کبھی یہ سننا نہیں [...]

  • ٹانگ اونچی رہے

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [12 September 2010]

    جب سے کانگریس کی حکومت ختم ہوئی ہے ہم خواہ مخواہ خوش تھے جیسے ہم نے کانگریس کو ووٹ نہ دے کر کانگریس سے بہت بڑا انتقام لے لیا ہے۔ ہم اپنے طور پر خود کو ایک کامیاب سیاست دان بھی سمجھنے لگے تھے جو کہ عوام کی سمجھ میں نہ آنے والی چالیں چل [...]

  • ہم بھی وہیں موجود تھے۔۔۔۔ قصہّ ایک مشاعرے کا

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [10 September 2010]

    واللہ مزا آگیا۔
    جی چاہ رہا ہیکہ آپ کو مشاعرے کی داستان سے پہلے مشاعرہ گاہ کی داستان سنا یئں۔ سیٹوں کا انتظام دیکھ کر کئی سال بعد یاقوت محل اور ضیا ء ٹاکیز کی یادیں تازہ ہو گئیں۔ البتہ پیچھے والے ذرا بہتر کرشنا ٹاکیز کا مزا لے رہے تھے۔تالیوں کی گونج تو تھی لیکن [...]

  • قحط الرجال

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [9 September 2010]

    قحط ا لرِّجال
    پہلے ہم اسے دانشوروں کا تکیہ کلام سمجھتے تھے۔
    جس طرح میکانک حضرات جب اصل خرابی تک پہنچ نہیں پاتے تو ” مینو فیکچرنگ ڈیفیکٹ ” کہکر جان چھڑا لیتے ہیں اسی طرح ہمارے قائدین اور دانشور حضرات بھی جب مسائل کا صحیح حل سمجھنے سے قاصر ہوتے ہیں تو قحط الرجال کہکر [...]

  • سیاست کے قلندر صحافت کے سکندر : نعیم اللہ شریف

    زمرہ : مزاحیہ خاکے

    [6 September 2010]

    جدہ میں عام طور پر دو قسم کے جلسے زیادہ ہوتے ہیں ایک تعزیتی اور دوسرے وداعی۔
    میں ذاتی طور پر اپنے لئے تعزیتی پسند کرونگا کیونکہ اسمیں جانے والے مرحوم کو نہ ہوم ورک دیا جا سکتا ہے اور نہ مرحوم کومروّت میں سر جھکا کر بھانت بھانت کے مقرّرین کے مشورے سننے پڑتے ہیں۔وداعی [...]

  • ایک لاکھ روپے کی ضرورت

    زمرہ : مزاحیہ مضامین

    [1 September 2010]

    ہم اور ہماری قبیل کے کئی دوست یہ عہد کر کے سعودی عرب آئے تھے کہ دو چار سال میں ایک آدھ لاکھ روپیئے جمع کر کے واپس لوٹ جائیں گے اور الحمدللہ ہماری استقامت میں کوئی فرق نہیں آیا ۔ آج تیس سال بعد بھی ہم اپنے عہد پر قائم ہیں اور آپ سب [...]